33

بلوچستان میں پولیو کا ایک اور کیس

تصویر کے کاپی رائٹ
AFP

Image caption

۔۔۔پاکستانیوں کے بیرون ملک سفر کرنے سے پہلے انھیں پولیو کے قطرے پلائے جاتے ہیں

پاکستان کے صوبہ بلوچستان میں پولیو کے ایک اور کیس کی تصدیق ہوگئی ہے جس کے بعد صوبے میں وائرس سے متاثرہ بچوں کی تعداد تین ہو گئی ہے۔

کوئٹہ میں صحت کے عالمی ادارے ڈبلیو ایچ او کے مطابق پولیوکے وائرس کی تصدیق افغانستان سے متصل ضلع قلعہ عبداللہ میں 8 ماہ کے ایک بچے میں ہوئی ہے۔

اس سے پہلے گذشتہ ہفتے ملک کے چاروں صوبوں اور قبائلی علاقوں سے ایک ہی دن میں پولیو کے 13 نئے کیسز سامنے آنے کے بعد ملک بھر میں پولیو وائرس سے متاثرہ افراد کی تعداد 158 تک پہنچ گئی تھی۔

ڈبلیو ایچ او کے مطابق افغانستان سے متصل سرحدی شہر چمن میں 8 ماہ کے بچے محمد مزمل میں پولیو وائرس کی موجودگی کا شک ہونے پر اس کے خون کے نمونے ٹیسٹ کے لیے نیشنل انسٹیٹیوٹ آف ہیلتھ اسلام آباد بھیجے گئے تھے جہاں بچے میں پولیو وائرس کی تصدیق ہوئی۔

تصویر کے کاپی رائٹ
AP

Image caption

پاکستان میں انسدادِ پولیو کی مہم ایک عرصے سے جاری ہے لیکن اس کے باوجود اس وائرس کو مکمل طور پر ختم نہیں کیا جا سکا

بلوچستان میں 2011 تک پاکستان کے دوسرے صوبوں کے مقابلے میں پولیو کے زیادہ تر کیس سامنے آئے لیکن اس سال کے شروع تک کوئی کیس رپورٹ نہ ہونے کے باعث حکام کی جانب سے یہ بھی دعویٰ کیا جاتا رہا کہ بلوچستان پولیو فری ہوگیا ہے۔

تاہم رواں سال کے وسط میں صوبے سے ایک مرتبہ پھر پولیو کے کیسز سامنے آنا شروع ہوگئے ہیں۔

اس سال بلوچستان میں پولیو کے پہلے کیس کی تصدیق قلعہ عبداللہ میں ہوئی تھی جبکہ دوسرے کی اسی ماہ کے دوران کوئٹہ میں ہوئی۔

اب نئے کیس کی تصدیق کے بعد رواں سال کے دوران اب تک بلوچستان میں پولیو کے تین کیسز کی تصدیق ہوگئی ہے۔

پاکستان میں انسدادِ پولیو کی مہم ایک عرصے سے جاری ہے لیکن اس کے باوجود اس وائرس کو مکمل طور پر ختم نہیں کیا جا سکا۔

گذشتہ سال پولیو کے قطرے پلانے والے کارکنان پر کئی بار حملہ کیا گیا جس میں متعدد کارکنان ہلاک ہوئے تھے اور ان حملوں کے بعد پولیو مہم میں حصہ لینے والے کارکنوں کے ساتھ پولیس اہلکار تعینات کیے گئے تھے۔



Source link

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

Leave a Reply